Connect with us

اسرائیل کی تباہی میں اتنا وقت باقی ہے

  • دن
  • گھنٹے
  • منٹ
  • سیکنڈز

Uncategorized

اسرائیل، استنبول کے لیے حقیقی خطرہ بن چکا: ترکی

palestine_foundation_pakistan_turkey-israel-flags

ترکی کی نیشنل سیکیورٹی کونسل نے اسرائیل کی خطے میں اسلحے کے حصول کی دوڑ پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ تل ابیب استنبول کے لیے حقیقی خطرے کی شکل اختیارکر چکا ہے. جمعرات کے روز نیشنل سیکیورٹی کونسل کے استنبول میں ہوئے اجلاس میں اسرائیل کی مشرق وسطیٰ میں اسلحہ کی دوڑ میں سب سے آگے رہنے کی پالیسی پر کڑی تنقید کی گئی. اجلاس میں اسرائیل کی ترک دشمن پالیسی پرغور کے بعد کہا گیا کہ صہیونی ریاست کی معاندانہ پالیسیاں نہ صرف خطے کے تمام ممالک کے لیے نقصان دہ ہیں بلکہ ترکی کے لیےحقیقی خطرہ ہیں.اجلاس کے بعد جاری ایک بیان میں اسرائیل سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ خطے میں اسلحہ کے انبار لگانے کی پالیسی ترک کرتے ہوئے باہمی احترام اور تعاون کی پالیسی اختیار کرے. بیان میں کہا گیا کہ اسرائیل کی جانب سے ترکی کے حوالے سےاختیار کردہ پالیسی خود اسرائیل کے لیے بھی نقصان دہ ہے اور مستقبل میں دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی کو مزید سخت کرے گی. خیال رہے کہ دونوں ملکوں کے درمیان سنہ 2008ء کے آخر میں غزہ پر اسرائیلی حملے کے بعد تعلقات کشیدہ چلے آ رہے ہیں، دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی میں اس سال اور اضافہ اس وقت ہوا جب اسرائیل نے ترکی کے ایک امدادی جہاز فریڈم فلوٹیلا کو غزہ کی جانب جاتے ہوئے راستے میں اسرائیلی فوج نے روک کر اس پر حملہ کر دیا. حملے میں نوترک رضاکار شہید اور پچاس زخمی ہو گئے تھے. ترکی اسرائیل کی اس جارحیت پر صہیونی حکومت سے معافی اور ھرجانہ ادا کرنے کا مطالبہ کر چکا ہے.دوسری جانب ترکی کے اخبارات نے نیشنل سیکیورٹی کونسل کے بیان کو سنجیدہ قرار دیتےہوئے کہا ہے کہ ترکی نے سنہ 1949ء میں اسرائیل کو تسلیم کرنے کے بعد پہلی مرتبہ اسے اپنے لیے براہ راست خطرہ تسلیم کیا ہے.

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Copyright © 2018 PLF Pakistan. Designed & Maintained By: Creative Hub Pakistan