Connect with us

اسرائیل کی تباہی میں اتنا وقت باقی ہے

  • دن
  • گھنٹے
  • منٹ
  • سیکنڈز

Palestine

شکاگو میں اسرائیلی کھجور کا بائیکاٹ

امریکی شہر شکاگو کی مقامی مارکیٹ میں مسلمان دکاندار محمد خالد اس بات کو یقینی بنا رہے ہیں کہ ان کے پاس آنے والے مسلمان گاہکوں کو کسی بھی طرح اپنے روایتی سحر و افطار کی یاد نہ ستائے۔

فلسطین سے تعلق رکھنے والے محمد خالد کی دکان پر پاکستان، بھارت اور مشرق وسطیٰ کے ممالک سے درآمد شدہ اشیا خورد و نوش موجود ہیں۔

محمد خالد کی دکان پر مشہور لال شربت بھی موجود ہے جو پاکستان اور بھارت میں افطار کا لازمی جزو سمجھا جاتا ہے۔

رواں سال رمضان میں ایک امریکی تنظیم ’امیریکن مسلمز فار فلسطین‘ کی جانب سے اسرائیلی کھجوروں کے بائیکاٹ کی مہم بھی چلائی جا رہی ہے۔ محمد خالد بھی اس مہم کا حصہ ہیں۔

اس مہم پر بات کرتے ہوئے انھوں نے ذرائع  بتایا کہ ’میرا خیال ہے یہ ذمہ داری تمام مسلمان برادری پر ہے۔ ہمارے پاس صرف فلسطین یا کیلی فورنیا، میکسیکو، الجیریا اور تیونس کی کھجوریں ہیں۔‘

خالد کا کہنا تھا کہ ’اسرائیل کی کھجوریں نہیں کیوں کہ ہم ان فلسطینیوں کے لیے کم سے کم اتنا تو کر سکتے ہیں جنہوں نے اپنی زمین سمیت بہت کچھ کھو دیا ہے۔‘

شکاگو میں موجود مسلم برادری کے لیے رمضان کے لوازمات پر بات کرتے ہوئے خالد نے بتایا کہ ’مشرق وسطیٰ پاکستان اور بھارت سے تقریباً ہر چیز بالخصوص حلال گوشت اور تمام اسلامی اشیا موجود ہیں۔‘

انھوں نے بتایا کہ ’یہاں تقریباً آٹھ ماہ قبل ہی رمضان کی تیاریاں شروع ہو جاتی ہیں۔ بالخصوص اس وقت جب ہر چیز کی قیمتیں بڑھ جاتی ہیں تو رمضان سے پہلے جو کچھ ہو سکے وہ ہم پہلے ہی سٹاک کر لیتے ہیں۔‘

رمضان کے حوالے سے اپنی دکان پر موجود کھجوروں کی اقسام پر بات کرتے ہوئے خالد کہا کہنا تھا کہ ’ہمارے پاس بہت ساری اقسام کی کھجوریں ہیں۔ چاہے یہ فلسطین سے ہوں یا کیلی فورنیا سے۔ اس سال خوش قسمتی سے ہمارے پاس الجیرین کھجوریں بھی ہیں۔‘

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Copyright © 2018 PLF Pakistan. Designed & Maintained By: Creative Hub Pakistan