Connect with us

اسرائیل کی تباہی میں اتنا وقت باقی ہے

  • دن
  • گھنٹے
  • منٹ
  • سیکنڈز

Palestine

امریکہ, اسرائیل اور ہندوستان جابر نظاموں کی سرپرستی کر رہے ہیں، ڈاکٹر صابر ابو مریم

کراچی (فلسطین نیوز۔مرکز اطلاعات ) فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر صابر ابو مریم نے کہا ہے کہ  چند عرب ممالک کی جانب سے اسرائیل کو تسلیم کرنے سے مسئلہ فلسطین کو ختم نہیں کیا جا سکتا ، فلسطین تاریخی اور جغرافیائی اعتبار سے فلسطینیوں کا تھا اور رہے گا۔

جمعہ کے روز خانہ فرہنگ جمہوری اسلامی ایران کی جانب سے آن لائن ویڈیو کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت خانہ فرہنگ کے ڈائرکٹر بہرام کیان نے کی،  کانفرنس میں فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر صابر ابومریم ، ماہر بین الاقوامی تعلقات ڈاکٹر شائستہ تبسم، معروف صحافی مبشر میر، مجلس وحدت مسلمین کے علامہ احمد اقبال اور انچارج ایران قونصلیٹ علی رضا سجادی نےاپنے خیالات کا اظہار کیا۔

اس موقع پر خانہ فرہنگ کے ڈائرکٹر بہرام کیان کا کہنا تھا کہ فلسطین کاز کو فراموش نہیں کیا جا سکتا امریکا کی جانب سے مشرقی وسطیٰ کیلئے تیار کردہ نام نہاد امن منصوبہ صدی کی ڈیل کا معاہدہ بری طرح سے ناکام ہو چکا ہے۔

ماہر بین الاقوامی تعلقات ڈاکٹر شائستہ تبسم نے کانفرنس میں اپنے خیالات کا اظہا رکرتے ہوئے کہا ہے کہ مغربی دنیا کا فلسطین میں انسانی حقوق کی پامالی پر دوہرا معیار قابل مذمت ہے ۔

ایرانی قونصلیٹ کے ذمہ دار علی رضا سجادی کا کہنا تھا کہ  عرب دنیا کے اسرائیل کے ساتھ تعلقات مسلم اُمّہ سے غداری ہے۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر صابر ابو مریم کاکہنا تھا کہ امریکہ اور قابض صیہونی ریاست اسرائیل کی شکست کا زمانہ شروع ہو چکا ہے مسلم دنیا فلسطین کی آزادی کے لئے متحد ہو جائے ،  چند عرب ممالک کی جانب سے اسرائیل کو تسلیم کرنے سے مسئلہ فلسطین کو ختم نہیں کیا جا سکتا ، فلسطین تاریخی اور جغرافیائی اعتبار سے فلسطینیوں کا تھا اور رہے گا ۔ او آئی سی مؤثر کردار ادا کرنے میں ناکام رہی ہے جس کا فائدہ صہیونی طاقتوں نے حاصل کیا ہے ۔

ڈاکٹر صابر ابو مریم نے کہا کہ پاکستان میں فلسطین پر قابض صیہونی ریاست اسرائیل کی حمایت میں با ت کرنے والے حقیقت میں پاکستان کے  دشمن ہیں، پاکستان کو ایران، چین اور روس کے ساتھ ملک کر ریجن میں نیا بلاک تشکیل دینا چاہئیے تا کہ خطہ سمیت علاقائی مسائل کو منصفانہ انداز میں حل کیا جائے۔

ان کاکہنا تھا کہ امریکہ، اسرائیل اور ہندوستان کو ان کے جرائم کا حساب دینا ہو گا، کورونا مسائل کی آڑ میں صہیونی جرائم کو فراموش نہیں ہونے دیں گے۔

انہوں نے مسلم دنیا کے حکمرانوں سے مطالبہ کیا کہ وہ اسرائیل کے ساتھ تعلقات کے فیصلہ پر نظر ثانی کریں ۔ اسرائیل صرف فلسطین کا دشمن نہیں بلکہ پوری مسلم امہ کا دشمن ہے ،  انہوں نے کہا کہ اسرائیل سے تعلقات قائم کرنے والے ممالک عنقریب اسرائیلی جرائم اور سازشوں کا نشانہ بنیں گے۔

مقررین کاکہنا تھا کہ عرب دنیا کا اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کرنا بہت بڑی خیانت اور سنگین غداری ہے ۔ القدس تاریخ کے اعتبار سے سنگین خطرے سے دوچار ہے اور یہ ہم سب کی ذمہ داری بنتی ہے کہ ہم القدس کے دفاع کے لئے مشترکہ جد وجہد کریں ۔ مقررین نے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ رمضان المبارک کے آخری جمعہ کو یوم القدس مناتے ہوئے صہیونی سازشوں کو ناکام بنائیں اور فلسطینی عوام سے اظہار یکجہتی کریں ۔

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Copyright © 2018 PLF Pakistan. Designed & Maintained By: Creative Hub Pakistan