Connect with us

پی ایل ایف نیوز

اسلام آباد: القدس کی آزادی کی جد و جہد جاری رکھیں گے، پانچ جولائی کو القدس یکجہتی کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گا۔

اسلام آباد( )فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان اسلام آباد چیپٹر کے رہنماؤں بشمول مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رہنما علامہ اصغر عسکری، تحریک جوانان پاکستان کے ڈاکٹر عرفان، جماعت اسلامی کے سہراب خان، جماعۃ الدعوۃ کے رہنما زبیر صدیقی، عام آدمی پارٹی کے صدر حمید ملک، آفتاب ضیاء اور دیگر نے اسلام آباد پریس کلب میں مسئلہ فلسطین کے عنوان پر اہم پریس کانفرنس

Islamabad4

اسلام آباد( )فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان اسلام آباد چیپٹر کے رہنماؤں بشمول مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رہنما علامہ اصغر عسکری، تحریک جوانان پاکستان کے ڈاکٹر عرفان، جماعت اسلامی کے سہراب خان، جماعۃ الدعوۃ کے رہنما زبیر صدیقی، عام آدمی پارٹی کے صدر حمید ملک، آفتاب ضیاء اور دیگر نے اسلام آباد پریس کلب میں مسئلہ فلسطین کے عنوان پر اہم پریس کانفرنس

سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کہ فلسطین دنیائے اسلام و انسانیت کے مسائل میں سب سے اہم ترین مسئلہ ہے اور القدس کا مسئلہ دنیا کے تمام ترین مسائل میں اولین حیثیت کا حامل ہے ، القدس مسلمانوں کو تیسرا مقدس مقام ہونے کے ساتھ ساتھ قبلہ اول ہے اور القدس امت اسلامی کا مرکز و محور ہے ، القدس اتحاد ووحدت کا مظہر اور نشانی ہے ، القدس دنیا کے تمام ظالموں اور جابروں کے مقابلے میں وحدت کی واحد نشانی اور اسلامی مزاحمت کا نشان ہے، لہذٰا القدس کی بازیابی اتحاد اور اسلامی مزاحمت کے نتیجے میں ہی ممکن ہے۔

مقررین نے کہا کہ اسلام آباد اور روالپنڈی کے عوام کی آگہی اور بیداری کے لئے یوم القدس اور آزادی فلسطین کی مناسبت سے فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کی مرکزی مہم بعنوان ’’القدس امت اسلامی کا مرکز و محور‘‘کے تحت اسلام آباد میں مورخہ پانچ جولائی کو القدس یکجہتی کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گا جس میں پاکستان کی معروف سیاسی ومذہبی شخصیات کے علاوہ اسکالر اور دانشور خواتین و حضرات شریک ہوں گے۔
انہوں نے ذرائع ابلاغ سے اپیل کی کہ فلسطینیوں کی حمایت میں جاری فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کی مہم’’القدس امت اسلامی کا مرکز و محور‘‘کو اخبارات اور ٹی وی چینلز پربھرپور کوریج دی جائے تا کہ پاکستان کے عوام تک مسئلہ فلسطین کی آواز کو اجاگر کیا جائے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ہ رمضان المبارک ایسے حالات میں آیا ہے کہ فلسطین ہی نہیں بلکہ پورا اعالم اسلام لہو لہو ہے۔ اور یہ سب کچھ گریٹر اسرائیل کی صہیونی سازش کے تحت امریکا اور اس کے اتحادی ممالک کی سرپرستی میں کیا جارہا ہے۔ نام نہاد عالمی برادری بھی فلسطینیوں کے حق میں کوئی مثبت اور موثر کردار ادا کرنے سے قاصر ہے، آج پوری مسلم دنیا آگ وخون کی لپیٹ میں ہے، ہر جگہ اسرائیل کا دفاع کرنے کے لئے نام نہاد اسلامی گروہ کھڑے ہو چکے ہیں بظاہر انہوں نے نے اسلام اور اسلامی حکومتوں کے قیام کا نعرہ بلند کیا ہو اہے لیکن حقیقت میں وہ غاصب صیہونی ریاست اسرائیل کا دفاع کر رہے ہیں اور گریٹر اسرائیل کے ناپاک منصوبے کو عمل درآمد کرنے کے در پے ہیں، آج انبیاء ؑ کی سرزمین فلسطین کی صورتحال ہمارے سامنے ہے ، اسرائیل مظالم کا سلسلہ جو سنہ1948ء سے شروع ہوا تھا کسی دور میں نہیں تھم سکا بلکہ ہمیشہ اس میں تیزی آتی رہی ہے ، گذشتہ برس اسی ماہ مبارک رمضان میں غزہ کے عوام پر 51روزہ جنگ مسلط کی گئی اس جنگ کے نتیجے میں ہونے والی بد ترین تباہ کاریاں آج ایک سال بیت جانے کے بعد بھی غزہ میں نظر آ رہی ہیں، غرض یہ کہ پورا فلسطین جل رہاہے۔القدس خطرے میں ہے، آج عراق جل رہا، شام میں لاشوں کے انبار ہیں، لبنان دہشتگردوں کے نشانے پر ہے،یمن میں خون کی ہولی کھیلی جا رہی ہے، برما میں مسلمانوں کو بڑے پیمانے پر اس لئے قتل وغارتگری کا نشانہ بنایا جا رہاہے تا کہ دنیا کی توجہ عالم اسلام و انسانیت کے بنیادی ترین اور اول ترین مسئلہ یعنی مسئلہ فلسطین و القدس سے ہٹا دی جائے، خود سعودی عرب میں مساجدکے اندر نمازیوں پر خود کش بم دھماکے ہوئے ہیں، تیونس میں بھی اسی طرح کی کاروائیاں دیکھنے میںآ رہی ہیں، لیبیا کی صورتحال ہم پہلے ہی دیکھ چکے ہیں، مصر میں بھی ہم دیکھ چکے ہیں کہ کس طرح ایک منتخب حکومت کو امریکی ، اسرائیلی اور عرب امداد سے چلتا کیا گیا ہے،کویت میں دیکھیں تو وہاں بھی حال ہی میں جمعہ نماز کے دوران نمازیوں کو خود کش دھماکے کا نشانہ بنایا گیا ہے، پاکستان کی بات کریں تو یہاں کی صورتحال بھی اسی طرح ہے گذشتہ چند برس میں ستر ہزار سے زائد پاکستانیوں کو مساجد، امام بارگاہوں، جلوسوں، بازاروں، سیکورٹی چیک پوسٹوں، سرکاری دفاتر، ٹارگٹ کلنگ سمیت تفریحی مقامات سمیت اسکولوں اور دیگر مقاما ت پر دہشت گردی کا نشانہ بنایا گیا ہے، یہ ساری صورتحال صرف اور صرف اس لئے پیدا کی گئی ہے کہ مسلم دنیا کے اندر فلسطین کاز کی آواز کو دبا دیا جائے ، اس قدر مسائل کا انبار لگایا جائے کہ مسلمان اقوام مجبور ہو جائیں کہ وہ اپنے اپنے مسائل میں الجھ جائیں اور اسلامی کاز اور امت مسلمہ کے بنیادی ترین مسئلہ القدس کو فراموش کر دیں۔انہوں نے علمائے کرام سے اپیل کی ہے کہ رمضان میں شب قدر میں فلسطین کی آزادی کے لئے خصوصی دعائیں مانگی جائیں ۔ اسی مقدس شب کی برکتیں جمعۃ الوداع اپنے دامن میں سمیٹ کر آتا ہے ۔ اسی بابرکت دن کو عالمی یوم القدس کی ملک گیر ریلیاں نکالی جائیں گی۔ اہل وطن سے التماس ہے کہ پہلے سے زیادہ بھرپور شرکت کرکے اسے کامیاب بنائیں۔ان کاکہنا تھا کہ دنیا کے اندر پید اہونے والے تمام تر مسائل کی جڑمیں بالآخر امریکی اور اسرائیلی ہاتھ کار فرما ہے، آج انسانیت اور اسلام کے دشمن یہ چاہتے ہیں کہ فلسطینیوں کے حق میں اٹھنے والی آوازوں کو دبا دیا جائے تا کہ فلسطینیوں کی جد وجہد بھی کسی سرد خانے کی نذر ہو جائے تاہم ضرورت اس امر کی ہے کہ مسلمان اقوام بیدار ہوں ، عالمی استعمار کی سازشوں کو سمجھیں اور پہلے سے دوگنی قوت کے ساتھ دنیا کی اقوام کو بیدار کرتے ہوئے انہیں باور کروائیں کہ دنیا کے اندر تمام تر مسائل کا ذمہ دار امریکہ اور اس کی ناجائز اولاد اسرائیل ہے، دنیا میں ہونے والی قتل و غارت اور دہشت گردی کا مقصد بھی یہی ہے کہ دنیا کی توجہ انہی مسائل کی طرف لگی رہے اور انسانیت کے اصل دشمن اسرائیل کی طرف کسی کو خیال نہ رہے۔

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Copyright © 2018 PLF Pakistan. Designed & Maintained By: Creative Hub Pakistan